اشاعتیں

جولائی, 2023 سے پوسٹس دکھائی جا رہی ہیں

غلام منور کی تمام تحریریں | ریختہ

تصویر
غلام منور   ہم سے رابطہ کریں   • ہمارے بارے میں  • دستبرداری • رازداری کی پالیسی تعارف     غز ل 56    اشعا 124       نظم 2     اقوال 35    ای - کتاب 6 غلام منور ____ غزل   56 ____ ♥️ اداس شامیں عذاب راتیں گزر ہی جائیں گی روتے رو تے ♥️ تیری قربت میں پڑھتی ہے مری دھڑکن اسے کہنا ♥️ کیا بتلائیں تجھ کو حقیقت غم نے ایسا زبان کیا ♥️ نصیبوں کی روانی تھی میاں پہلے بہت پہلے ♥️ پھر انا کو دفنایا ہے غبار ہونے کو __________ تمام اشعار 124 ____ گلے    سے   لگا  کر  ہمیں  رو  دیئے   وہ بچھڑ کر کبھی ہم نہ یوں مل سکے پھر __________ یہ زمیں وہ آسماں کچھ بھی نہیں بن ترے سارا جہاں کچھ بھی نہیں __________ وہ شوخی سے کبھی غالب ہو جاتا تھا ہم پہ ہم سے بھولی نہیں جاتی یہ چاہت اس کی __________ اپنوں کے رخ بدلنے سے تھا پریشاں میں پھر یوں ہوا کہ جاناں تم بھی بدل گئے __________ اب کے سوچا ہے بگاڑوں میں یہ صورت کسی دن لوگ چہرے پہ اداسی کا سبب پوچھتے ہیں  __________ تمام اقوال   35 ____ کسی کو بیوفا کہنے سے پہلے، اس کے نظریے سے بھی، اپنے اندر گہرائی تک جھانک کر ضرور دیکھ لیں  ____________ جو شخص آپ کو باد مخالف

تری قربت میں بڑھتی ہے مری دھڑکن اسے کہنا

غلام منور تری  قربت میں  پڑھتی ہے  مری  دھڑکن اسے کہنا تری  فرقت   میں  ہوتی ہے  بڑی  الجھن اسے  کہنا ابھی پڑھنے کے دن ہیں تو چلو ہم ساتھ پڑھتے ہیں نہیں   آتا   کبھی   بھی  لوٹ   کر  بچپن  اسے  کہنا پرانے  گھر  کا وہ  آنگن  جہاں ہم ساتھ کھیلے تھے چلو   تم   کو    بلاتا   ہے    وہی    آنگن    اسے  کہنا کہیں آئینے سے خود  کی  نظر اس کو نہ لگ جائے نہ  دیکھا  وہ  کرے  ہر پل یوں  ہی درپن اسے کہنا اسے کہنا کہ جب محشر کو ہم تم سے ملیں گے تو وہاں  تیرے  لئے  کچھ  لائیں  گے  کنگن  اسے کہنا تری یادیں لیکر  آتی  ہیں بارش  کی کئی  بوندیں بہت  ہم   کو   یہاں  تڑپاتا   ہے   ساون  اسے  کہنا  تری یادوں کی  وادی سے  کہاں  آؤں گا  گلشن کو وگرنہ  پھر    ہمیں    بہکائے   گا   گلشن  اسے کہنا مرے پہلو  سے  اٹھ  کر   غیر   تم   ہو  گئے  لیکن ابھی  تک  منتظر   ہے  یاں  مرا   دامن  اسے کہنا منورؔ مست دیوانہ ہو  کر سجدے  میں  روئے ہے  ہے مدت سے  مقدس  کتنا  یہ   بندھن  اسے کہنا 01/03/2023 ❤️

عشق و محبت یک طرفہ اور لافانی ہوتی ہے

  غلام منور   عشق و محبت یک طرفہ اور لافانی ہوتی ہے، اس کا سب سے بڑی دلیل خدا کی ذات ہے، یہ ہمیں ستر ماؤں سے زیادہ پیار کرتا ہے، چاہے ہم اس کی عبادت کریں نہ کریں یہ کبھی ہمیں محبت کرنا نہیں چھوڑتا اور نہ ہی تنہا چھوڑتا ہے، بلکہ ہمارے گناہوں کی پردہ پوشی کرتا  ہے، بیشک وہ رحیم و کریم و عشق صادق ہے *** _________

دل میں دکھ ہو تو کہاں گھوم نے جائے کوئی

غلام منور دل میں دکھ ہو تو کہاں گھوم نے جائے کوئی یار   روٹھا   ہو   تو  کیا   عید    منائے  کوئی *** _________

اپنوں کے رخ بدلنے سے تھا پریشاں میں

غلام منور اپنوں کے رخ بدلنے سے تھا پریشاں میں پھر یوں  ہوا کہ جاناں تم بھی بدل گئے *** __________

دل لگی گر ہو تو دعا کیجئے

غلام منور   دل  لگی  گر ہو تو  دعا  کیجئے عشق ہو جائے گر تو کیا کیجئے وصل  میں ہجر  ساتھ لائے  ہو آپ ہم  سے نہ یوں ملا  کیجئے کوئی جیتے جی خاک ہو جائے  ایسا بھی سخت نہ گنہ کیجئے بوسہ لینا  خطا  ہے  گر  جاناں سو ہمیں آپ  سے جدا  کیجئے کچھ  منورؔ  کو  چین   آ  جائے آپ  ایسی  کوئی   دوا  کیجئے 31/08/2022 ❤️  

میں لوگوں کو نصیحت کرنے کے بجائے

غلام منور میں لوگوں کو نصیحت کرنے کے بجائے، اپنے عقل پر آپ عمل کرنے پہ زیادہ زور دیتا ہوں *** __________

بس ٹک ہی دل بہلائے گوہر

غلام منور بس  ٹک  ہی   دل   بہلائے  گوہر پھر  آفت   سر    پر   لائے   گوہر  خبطی   ہو    جائے   تابانی   سے گر  احمق   کو   مل   جائے  گوہر  ہاں  بدقسمت  ہے  وہ  مردم  بھی قسمت  میں  جس کے   آئے  گوہر جس معمورہ میں جائے واں واں قتل و غارت     کروائے       گوہر کتنے   حاکم   غارت   ہوئے    ہیں بس خوں  ہی  سے  نہلائے   گوہر جب حیواں ہی بن  بیٹھا   انساں پھر  کیا  کیا   نہ   کروائے   گوہر 14/11/2022 ❤️

گلے سے لگا کر ہمیں رو دیئے وہ

  غلام منور گلے  سے   لگا  کر  ہمیں  رو   دیئے   وہ بچھڑ کر کبھی ہم نہ یوں مل سکے پھر   *** __________

ہماری تم اداسی نہ پکڑ پائے

غلام منور ہماری     تم     اداسی      نہ      پکڑ     پائے عزا  میں   شاد  ہو  کر   ہم  رہیں  جب  تک چمن   میں    دل   لگانا   ہے    ذرا    ہم   نے ہمارے  باغ میں  بھی گل  کھلیں  جب  تک  اسیری   بھی  ہمیں  اچھی   لگی   اس  پل قفس میں آپ خود سب سے ملیں جب تک نفس  میں   تازگی   تک   آ   گئی   اس   ٹک رہی ہے ان کی  قدموں  میں جبیں جب تک رہیں  نزدیک   ہم   بھی   جب    تلک  ان  کے ستم  گر  نے  دیے   سب   زحمتیں جب  تک کسی  سے  تم  کرو  گے  عشق  سمجھو گے لہو  سے  ہر  طرف  ہم  یہ لکھیں  جب  تک سنو   آخر    بچھڑ   ہی   اب    گئے   ہو   تو فنا  کی    راہ   پر    تنہا    چلیں   جب   تک قمر  میں   بھی  نظر  آئے   ہمیں   جب   وہ منورؔ   پھر  غزل اس  پر   کہیں    جب   تک 29/05/2022 ❤️

اداس شامیں عذاب راتیں گزر ہی جائیں گی روتے روتے

غلام منور   اداس   شامیں   عذاب  راتیں  گزر   ہی  جائیں  گی  روتے روتے بچیں  جو  میری  عزیز  عمریں گزر  ہی جائیں  گی  روتے  روتے  نکال  کے  اپنے  دل سے  تو نے  تو  در بدر  مجھ  کو   کر  دیا  ہے سفر  کی  انجانی  ساری  راہیں  گزر  ہی جائیں  گی  روتے  روتے مجھے  کہاں  تک ستائیں گی  جاناں  تیری  یادیں  تری وہ باتیں یہ  دل  سے  آخر  تمام   یادیں  گزر   ہی  جائیں  گی  روتے  روتے ہے  میرے   آگے  کسی  کا  ساغر  چلا  منانے  میں  جشن  فرقت  کسے  خبر   پھر  ملول   شامیں  گزر  ہی  جائیں گی  روتے  روتے ہے   دم  منورؔ  میں   اب   بھی   باقی  چلے   بھی  آؤ  بچا  لو  آکر وگرنہ جو کچھ بچیں ہیں سانسیں گزر ہی جائیں گی روتےروتے 18/05/2023 ❤️

اس بلاگ سے مقبول پوسٹس

غلام منور کی تمام تحریریں | ریختہ

اداس شامیں عذاب راتیں گزر ہی جائیں گی روتے روتے

غلام منور کی غزلیں